Thursday, May 05, 2005

بسم اللہ الرحمن الرحیم With the name of Allah The Beneficent The Merciful

میں نے یہ کھاتہ (انگریزی میں بلاگ) شروع کیا ہے۔ سب کو دعوت ہے کہ اپنے اپنے خیالات کا اظہار کریں حدود کا تعین اوپر روزنامچہ کی تفصیل میں کر دیا گیا ہے۔ آپ سے درخواست ہے کہ آداب کو ہمیشہ ملحوظ خاطر رکھئے۔ I have started this blog and invite all of you to give your views / comments within the parameters laid down in the description above. You are requested to ensure sanctity of the blog. ‌میرا نام افتخار اجمل کسی حساب دان نے تجویز کیا تھا۔ کہتے ہیں اگر عربی کے حروف ابجد جمع کۓ جائیں تو میری پیدائش کا سال بنتا ہے۔ رہا میرے خاندان کا نام بھوپال تو یہ ایک لمبی کہانی ہے مگر میں بالکل مختصر بتاتا ہوں۔شروع میں تو ہم نے سمجھا کہ اس کا تعلق ریاست بھوپال سے ہو گا اور اس سلسلہ میں کچھ مدبر لوگوں نے جن میں آخری نواب بھوپال کے بہنوئی بھی شامل تھے ہمیں باور کرایا کہ ہم ریاست بھوپال کے اصلی وارثوں میں سے ہیں اور راجہ بھوجپال کی اولاد میں سے ہیں جو کہ راجہ جے پال کا بھائی تھا (جے پال کو محمود غزنوی نے شکست دی تھی) مگر تاریخ میں کہیں نہیں کہ جے پال کا کوئی بھائی بنام بھوجپال تھا۔ بالآخر مجھے چالیس سال کی تحقیق کے بعد معلوم ہوا کہ ہمارے آباؤ اجداد قطب الدین ایبک سے بھی پہلے ہندوستان آۓ۔ وہ اس وقت مسلمان تھےاور ہندوستان میں بے آباد زمینوں کو کاشت کے قابل بنایا جس سے خوب اناج پیدا ہوا۔ چنانچہ ہندوستان کے باسیوں نے انہیں بھیئوں پال یعنی زمین کو پالنے یا آباد کرنے والا کہنا شوع کر دیا۔ بعد میں یہ مختصر ہو کر بھوپال بن گیا۔

0 Comments:

Post a Comment

links to this post:

Create a Link

<< Home