Friday, May 06, 2005

انسان یا آدمی - Man / Woman or Human being

تو جناب آپ نے دیکھا میرا دیا گیا نام اور خاندانی نام ! مگر میرا ایک اور نام ہے جوآپ سب کا بھی ہے وہ ہے۔ ہیں کیا کہا ؟ "انسان ؟" ہاں۔ پیدا تو انسان ہی ہوتا ہے مگر پھر انسان بننا پڑتا ہے اور اس کے لۓ محنت کرنا پڑتی ہے۔ اس لئے "آدمی" کہا جاۓ تو صحیح رہے گا یعنی حضرت آدم علیہ السلام کی اولاد. ۔کیا خیال ہے ؟ So, you have read my given name and family name ! But I have another name common with all of you and that is; what you said ? “Human being ?” Yes, human being is born but, latter, one has to become human being and for that effort in needed. So, better say descendant of Adam or just man or woman. What do you think ?

7 Comments:

At 5/06/2005 10:06:00 PM, Blogger Asma said...

Assalam o alaykum w..w!

Good to see another of your blog :)

Wassalam n Allah hafiz

 
At 5/06/2005 11:17:00 PM, Blogger Nabeel said...

Iftikhar: so now please turn on the XML-feed of your blog and ask Zakaria to add it to the Urdu Planet. You should also add your blog's link to Urdu Wikipedia.

 
At 5/07/2005 02:55:00 AM, Blogger Asma said...

Assalamo alaykum w.w.!

Well, i think it's better to be something than nothing ... True, we have to work hard to become humans as said that "haq tu yah hay kay haq adaa na hua" ... But then becoming an aadmi is also not very easy!!

We are homosapiens :)

*just a wild thought*

 
At 5/07/2005 04:07:00 AM, Blogger Zack said...

نبیل: اس بلاگ کو اردو سیارہ میں شامل کر دیا ہے۔

 
At 5/07/2005 09:01:00 AM, Blogger iCheetah said...

Assalam-o-Alaikum

Nice Blog. I am a fan of yours in English, but now in Urdu too.
Waiting for your Urdu articles regarding politics and hypocrisy

 
At 5/07/2005 09:03:00 AM, Blogger iCheetah said...

پولینڈ کے ایک بچے نے جماعت میں اپنی استانی کو بتایا
“ہماری بلی نے چار بچے دیے ہیں اور وہ سب کے سب پکے کمیونسٹ ہیں۔“
استانی نے اسے خوب شاباش دی۔ ہفتہ بھر بعد جب انسپکٹر سکولز معائنے کے لیے آیا تو استانی نے اس بچے سے کہا کہ بلی کے بچوں والی بات پھر سے کہے۔ بچے نے کہا
“ ہماری بلی نے چار بچے دیے ہیں اور وہ سب کے سب پکے جمہوریت پسند ہیں ۔“
استانی نے بوکھلا کر کہا
“ہفتہ بھر پہلے تو تم نے یہ بات اس طرح نہیں کہی تھی“
بچے نے جواب دیا
“جی ہاں! مگر اب بلی کے بچوں کی آنکھیں کھل گئی ہیں ۔۔۔“

 
At 5/13/2005 12:07:00 PM, Blogger iabhopal said...

اسماء۔ نبیل و عبداقدیر !
معذرت دیر سے رجوع کرنے کی۔ بہر حال دیر ہونا اندھیر ہونے سے بہت بہتر ہے۔ آپ سب کا شکریہ میری حوصلہ افزائی کرنے کا۔ دیر کا سبب یہ ہوا کہ یہ کھاتہ بناتئے میں نے کہیں غلطی کر دی جس کے باعث ایک تو آپ کے تبصرے تاخیر سے شائع ہوئے دوسرے مجھے ان کی اطلاع نہ ہوئی۔ آج میں کھتہ دوہرا رہا تھا کہ میں نے آپ کے تبصرے دیکھے۔

 

Post a Comment

links to this post:

Create a Link

<< Home