Monday, June 20, 2005

شمعء زندگی

اپنی روح میں شمع جلا کے
اسے اندھیروں میں لے جاؤ
اگر لو گھٹتی ہو محسوس تمہیں
اسے خلوص کی چنگاری سے بڑھکاؤ
لو توصرف اس وقت بڑھے گی
جب اک شمع سے دوسری جلے گی
پھر اربوں جلتی ہوئی شمعیں
گھپ اندھیروں کو دھکیل دیں گی
رکھو بلند اپنی شمع کہ سب دیکھیں
لے کے چلو اسے ساحل سے ساحل
اور دنیا کو بھر دو آزادی کی روشنی سے
صرف آج نہیں ۔ ابد تک کے لئے

0 Comments:

Post a Comment

links to this post:

Create a Link

<< Home