Monday, May 15, 2006

چُٹکلے

ہفتہ کو اسلام آباد ميں درجہ حرارت 43 ڈگری سيلسِيئس تک گيا اتوار کو صبح نو بجے ہی بہت گرمی تھی ۔ اتوار بازار ہمارے گھر سے ايک ڈيڑھ کلوميٹر کے فاصلہ پر ہے ۔ ميں سودا لينے گيا تو وہاں ايک دکان پر کچھ لوگ گرمی کی شدّت کا ذکر کر رہے تھے ۔ مجھے آمد ہوئی ميں نے ايک صاحب کو مُخاطب کر کے پوچھا "بھائی صاحب ۔ اگر آپ کے ساتھ کو ہيراپھيری کرے تو؟" وہ صاحب کچھ پريشان ہوئے پھر بولے "ظاہر ہے گرمی آئے گی" ميں بولا "جب سب ہيراپھيری ميں لگے ہيں تو گرمی کی شکائت کيوں ؟"
.
اتوار بازار سے واپسی پر ايک کرائے کی پِک اَپ پر لکھا شعر پڑھا ۔
.
ميرے خلوص کی قيمت بھی کم نہ تھی
وہ کم انديش لوگ تھے سو دولت پہ مرگئے
.
ايک شعر ميرے بچپن کا
.
ہو جُون کا مہينہ خُنکی سی پڑ رہی ہو
بارہ بجے ہوں دن کے اور اوس پڑ رہی ہو
*
میرا دوسرا بلاگ يہاں کلِک کر کے پڑھيئے يا مندرجہ ذیل یو آر ایل اپنے براؤزر ميں لکھ کر کھولئے ۔
Hypocrisy Thy Name - - http://hypocrisythyname.blogspot.com - - یہ منافقت نہیں ہے کیا

4 Comments:

At 5/15/2006 11:36:00 AM, Anonymous Munir Ahmad Tahir said...

واقعی جناب ان دنوں ملک بھر میں گرمی کی شدت میں غیر معمولی اضافہ ہو گیا ۔ گزشتہ روز تو درجہ حرارت 50درجےسینٹی گریڈ سے بھی اوپر چلا گیا ہے ۔۔۔۔۔ اللہ رحم کرے غریب بیچاروں کا تو انتہائی برا حال ہے۔

 
At 5/15/2006 02:54:00 PM, Blogger iabhopal said...

منير احمد طاہر صاحب
اللہ سُبْحانُہُ و تعالٰی آپ پر کرم کرے ۔ ہم اسلام آباد کی گرمی سے تنگ پڑتے ہيں تو ڈيرہ غازی خان ۔ ملتان جيکب آباد اور سبّی کا درجہ حرارت ديکہ کر اللہ کا شکر ادا کرتے ہيں ۔

 
At 5/16/2006 09:21:00 AM, Anonymous Mehar Afshan said...

Khob likha aap nay, waqaai banday apnay sath hera pheri dekh ker garmi khajatay hain or chahtay hain kay hamara bananay wala hamari Us kay sath hera pherion ko nazar andaz kerta rahay,

 
At 5/16/2006 10:29:00 AM, Blogger iabhopal said...

مہر افشاں صاحبہ
اللہ سُبْحانُہُ و تعالٰی کی مجھ پر کرم نوازی ہے ۔ اللہ ميرے دماغ ميں ايسی باتيں ڈال ديتا ہے ۔ ميں نے کبھی ايسی باتيں نہيں سوچی ۔

 

Post a Comment

links to this post:

Create a Link

<< Home