Thursday, May 19, 2005

ایسا کرنا

اب کے سال تم ایسا کرنا اپنے پچھلے بارہ ماہ کے دکھ سکھ کا اندازہ کرنا سنہری یاد یں تازہ کرنا بھولے بسرے پل لکھ لینا پھر اس بیتے ہوئے اک اک پل کا اک اک موڑ کا احاطہ کرنا اور علاوہ ان کے د یکھو ساری محبتیں حاضر کرنا سارے دوست اکٹھے کرنا سارے موسم دھیان میں رکھنا پھر محتاط قیاس لگانا اگر خوشی بڑھ جاتی ہے تو پھر تم کو میری طرف سے آنے والا سال مبارک اور اگر غم بڑھ جائیں تو مت بے کار تکلیف کرنا دیکھو پھر تم ایسا کرنا میری خوشیاں تم لے لینا مجھ کو اپنے غم دے دینا

2 Comments:

At 5/26/2005 01:16:00 AM, Blogger Asma said...

Assalamo alaykum w.w!

A well versed one!

wassalam

 
At 5/26/2005 10:45:00 AM, Blogger iabhopal said...

Thank you Asma !

What I write is based on not only my thinking but also practice.

Just pray for me (though I enoyed you) that some time that is left with me I become more and more truthful servant of Allah.

 

Post a Comment

links to this post:

Create a Link

<< Home