Saturday, April 08, 2006

میلہ

کوئی آئے کوئی جائے
کوئی روئے کوئی گائے
میلہ رُکنے نہ پائے
میلہ جگ والا ساتھی رے چلتا رہے
*
قارئین سے گذارش
اگر میرا بلاگ براہِ راست یا اُوپر عنوان پرکلک کرنے سے نہ کھُلے تو مندرجہ ذیل یو آر ایل پر کلِک کیجئے یا اِسے اپنے براؤزر میں لکھ کر کھولئے http://www.pkblogs.com/iftikharajmal میرا دوسرا بلاگ مندرجہ ذیل یو آر ایل پر کلِک کر کے یا اِسے اپنے براؤزر میں لکھ کر کھولئے http://www.pkblogs.com/hypocrisythyname

2 Comments:

At 4/08/2006 11:35:00 AM, Blogger Khawar said...

پنجابى ميں كەتے ەيں ـ
ملكـ مائى دا وسے
كوئى روئے تے كوئى ەسے
آپ كى باتوں سے بزرگى كچهـ ذياده ەى جهلكنے لگى هے ـ
پنجابى كے مشەور شاعر
مياں محمد بخش صاحب فرماتے هيں ـ
گئى جوانى آيا بڑهاپا جاگ پئياں سب پيڑاں
ەن كى كرن محمد بخشا كوڑ جوائين هريڑاں ـ

 
At 4/08/2006 02:11:00 PM, Blogger iabhopal said...

خاور صاحب
آپ کم از کم پنجابی ۔ اُردو ۔ جاپانی ۔ فرانسیسی اور انگریزی زبان کے ماہر ہیں ۔ میں ماہر نہیں محروم ہوں اور ناجانے کب مرحوم ہو جاؤں ۔ عمر کے لحاظ سے تو مجھے بوڑھا ہی شمار ہونا چاہیئے مگر اللہ کے فضل سے بہت سے جوانوں سے زیادہ مُشقّت کر سکتا ہوں ۔ آخر والدیں نے خالص دودھ اور دیسی گھی کھِلا کر پالا تھا میگڈانلڈ اور کے ایف سی نہیں ۔ کیا خیال ہے ؟
آپ جانتے ہیں میری آپ سے عقیدت کی وجہ کیا ہے ؟ آپ کی اپنے گاؤں کے میلے کپڑوں والوں سے محبت ۔

 

Post a Comment

links to this post:

Create a Link

<< Home